امن مارچ یا امن کانفرنس، اس سے حالات میں تبدیلی نہیں آسکتی …. : مولانا عبدالحمید نعمانی

مولانا عبد الحمید نعمانی
ہم چاہے جتنا امن مارچ نکال لیں اور امن کانفرنس کر لیں حالات میں تبدیلی نہیں آئی گی جب تک کہ ہندوتو وادیوں کے اٹھائے سوالات کے جوابات اور غلط فہمیوں کا ہاتھ کے ہاتھ، ازالہ نہیں کر دیا جاتا ہے، وہ اپنے لوگوں میں کہتے ہیں کہ مسلمان اپنے اصل جہادی مقاصد اور شدت پسندی پر پردہ ڈالنے کے لیے امن مارچ اور کانفرنسیں کرتے ہیں، اس کے ساتھ ہی، انور شیخ کی کتاب، عرب سامراج اور جے دیپ سین کی کتاب بھارت میں جہاد بھی ہاتھوں میں تھما دیتے ہیں، دونوں کتابیں زہر سے بھری ہوئی ہیں، یہی وجہ ہے کہ ہماری طرف سے منعقد، مارچ اور کانفرنسوں کا اکثریتی سماج پر کوئی اثر نہیں ہو رہا ہے، روزنامہ انقلاب میں حال کے دنوں میں شائع ہمارے آرٹیکلز اسی تناظر میں ہیں ، لیکن یہ کافی نہیں ہے، ہمارے قائدین کو بھی کہنا ہوگا تا کہ اکثریتی سماج میں سوچنے کا دائرہ وسیع ہو اور ہندوتو وادیوں کی تشہیر پر سوال اٹھانے کا سلسلہ بھی شروع ہو، اللہ کرے۔

Related posts

Leave a Reply

Your email address will not be published.