بی جے پی دفتر کے قریب سے دیسی بم اور تلواریں برآمد، بی جے پی، آر ایس ایس کے دس کارکنان پولیس حراست میں

کیرالہ؍ کنور : انڈیا ٹوڈے کی خبر کے مطابق متعلقہ پانور پولیس نے دعوی کیا ہے کہ شہر میں بی جے پی دفتر کے قریب سے انہوں نے ایک تلوار اور تین دیسی ساختہ بم دستیاب ہوئے ہیں۔ اتوار کے روز کیرالا کے ضلع کننور کے پانور میں سی پی ائی ایم ریالی کے دوران کروڈ بم سے حملے کے بعد ریاست بھر میں دھاوے کئے جارہے ہیں۔ پولیس کے پانچ جوانوں کے بشمول سی پی ائی ( ایم ) کے پانچ کارکن بھی اس حملے میں زخمی ہوئے ہیں۔
دیسی ساختہ بم کے اس حملے کے بعد پولیس نے بی جے پی اور آر ایس ایس کے دس کارکنوں کو حراست میں لے کر پوچھ تاچھ کررہی ہے۔
پولیس نے اسی مقام سے کچھ گاڑیاں اور موبائیل فون بھی ضبط کئے ہیں۔سی پی ائی ایم کی ریالی پر حملے کا واقعہ مبینہ طور پر آر ایس ایس اور بی جے پی کی کارستانی ہے۔ اتوار کے روز جب سی پی آئی ( ایم ) کے کارکن پانور میں جلوس نکال رہے تھے اس وقت یہ حملہ پیش آیا تھا۔
مذکورہ حملے ایک ایسے وقت منظر عام پر آیا ہے جب ریاست کی برسراقتدار سیاسی جماعت سی پی ائی ایم اور آر ایس ایس و بی جے پی اپنے کارکنو ں کی موت کے لئے ایک دوسرے کو مورد الزام ٹھرارہے ہیں۔ درایں اثناء کچھ دن قبل امیت شاہ بائیں بازو کی حکومت کو کیرالا میں آر ایس ایس۔ بی جے پی ورکرس کے غلط کا ذمہ دار ٹھرایا ہے۔

Related posts

Leave a Reply

Your email address will not be published.