اردو اکادمی دہلی کی جانب سے خوابیدہ صلاحیتوں کو بیدارکرنے کی کوشش جاری ،طلبہ لے رہے ہیں حصہ

نئی دہلی(ملت ٹائمزعارفہ حیدر خان
اردو اکادمی، دہلی دہلی کے اسکولوں کے طلباءو طالبات میں تعلیم کا ذوق و شوق پیدا کرنے اور ان میں مسابقت کا جذبہ پیدا کرنے کے لیے ہر سال تعلیمی مقابلے منعقد کرتی ہے۔ ان مقابلوں میں اول، دوم اور سوم آنے والے طلباءو طالبات کو انعام دیتی ہے اور طلبا و طالبات کی حوصلہ افزائی کے لیے کنسولیشن انعام بھی دیتی ہے۔ ان مقابلوں میںتقریری ، فی البدیہہ تقریری، بیت بازی ، اردو ڈراما، غزل سرائی، کوئز( سوال و جواب) ، مضمون نویسی و خطوط نویسی مقابلے اور امنگ پینٹنگ مقابلہ شامل ہیں۔ یہ تعلیمی مقابلے دہلی کے پرائمری تا سینئر سیکنڈری اردو اسکولوں کے طلباءو طالبات کے درمیان منعقد ہوتے ہیں۔ یہ مقابلے 26اکتوبر 2017ءتک جاری رہیں گے جن کی تفصیل اکادمی کی ویب سائٹwww.urduacademydelhi.com/ پر دیکھی جاسکتی ہے۔
آج اکادمی کے قمررئیس سلور جوبلی آڈیٹوریم میں تقریری مقابلہ برائے سینئر سیکنڈری زمرہ(گیارہویں و بارہویں جماعت) منعقد کیا گیا جس کا موضوع تھا ”ماحولیات کو آلودگی سے بچانا ضروری ہے“ ۔ یہ موضوع پہلے ہی اسکولوں کو بھیج دیا گیا تھا۔ آج کے اس مقابلے میں بطورجج پروفیسر عبدالحق، جناب اشفاق احمد عارفی اور مولانا جلال حیدرنقوی شریک ہوئے۔
جح صاحبان کے فیصلے کے مطابق محمد اسحاق ولد محمد سلیم(شفیق میموریل سینئر سیکنڈری اسکول) کو فرسٹ پوزیشن کے لیے منتخب کیا گیا جب کہ سیکنڈ پوزیشن کے لیے محمد زبیر ولدنبیل احمد (ڈاکٹر ذاکر حسین میموریل سینئر سیکنڈری اسکول، جعفرآباد) کو منتخب کیا گیا اور تیسری پوزیشن کے لیے واجد خاں ولد معیزالرحمن (ڈاکٹر ذاکر حسین میموریل سینئر سیکنڈری اسکول، جعفرآباد) اور طہورہ سلیم بنت محمد سلیم (کریسنٹ اسکول، دریا گنج) کا انتخاب عمل میں آیا ان انعامات کے علاوہ حوصلہ افزائی کے لیے محمد صائم ولد محمد سلیم (اینگلوعربک سینئر سیکنڈری اسکول، اجمیری گیٹ) کو منتخب کیا گیا۔
مقابلے کے اختتام پر اظہار خیال کرتے ہوئے جج صاحبان نے شرکت کرنے والے تمام طلبا و طالبات کو مبارک باد پیش کرتے ہوئے کہا کہ اردو اکادمی، دہلی نے یہ مقابلے منعقد کراکر آپ حضرات کے لیے ایک اسٹیج فراہم کیا ہے اس لیے ضروری ہے کہ اساتذہ اور والدین زیادہ سے زیادہ اپنے بچوں کو ان مقابلوں میں شرکت کی ترغیب دیں کیوں کہ اس طرح کے مقابلوں سے بچوں میں مسابقت کا جذبہ پیدا ہوتا ہے۔

Related posts

Leave a Reply

Your email address will not be published.