ہم نے کوئی جرم نہیں کیا،مقدمہ کا سامنا کرنے کیلئے تیار ہیں:عدالت میں پیشی کے دوران راہل گاندھی کا بیان

میں مہاراشٹر کے ٹھانے میں ایک پروگرام کے دوران راہل گاندھی نے مبینہ طور پر کہا تھا کہ آر ایس ایس کے لوگوں نے مہاتما گاندھی کا قتل کیا تھا اور آج وہی لوگ ان کی باتیں کرتے ہیں
ممبئی :کانگریس صدر راہل گاندھی کی طرف سے آر ایس ایس (راشٹریہ سویم سیوک سنگھ ) کے لوگوں کو گاندھی کے قتل کا ذمہ دار ٹھہرانے والے بیان کے معاملہ میں عدالت نے الزامات طے کر دئیے ہیں۔راہل گاندھی آج مہاراشٹر کی بھونڈی عدالت میں پیش ہوئے جہاں انہوں نے کہا کہ انہوں نے کوئی جرم نہیں کیا اور وہ مقدمہ کا سامنا کرنے کو تیار ہیں۔ راہل گاندھی پر دفعہ 499 اور 500 کے تحت الزامات طے کئے گئے ہیں۔سال 2014 میں مہاراشٹر کے ٹھانے میں ایک پروگرام کے دوران راہل گاندھی نے مبینہ طور پر کہا تھا کہ آر ایس ایس کے لوگوں نے مہاتما گاندھی کا قتل کیا تھا اور آج وہی لوگ ان کی باتیں کرتے ہیں۔ آر ایس ایس نے اس بیان پر راہل گاندھی کے خلاف مجرمانہ ہتک عزت کا مقدمہ درج کرایا تھا۔
راہل گاندھی نے اس معاملہ کو منسوخ کرانے کے مقصد سے سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا لیکن انہیں وہاں سے راحت نہیں مل سکی۔ عدالت عظمیٰ نے راہل گاندھی کو معاملہ کو ختم کرنے کے لئے معذرت کرنے کا مشورہ دیا تھا۔ راہل گاندھی نے اس مشورہ کو مسترد کرتے ہوئے مقدمہ کا سامنا کرنے کی بات کہی تھی۔بھیونڈی عدالت میں پیشی کے دوران سابق وزیر اعلیٰ اشوک چوہان اور اشوک گہلوت بھی راہل گاندھی کے ہمراہ موجود تھے۔ کانگریس صدر نے کہا، ”یہ نظریہ کی لڑائی ہے۔ لیکن ہم جیتیں گے۔“ آر ایس ایس کارکن راجیش ک±نٹے نے راہل کے خلاف معاملہ درج کرایا تھا۔ اب معاملہ کی اگلی سماعت 10 اگست کو ہوگی۔راہل گاندھی پیشی کے بعد آج شام گورے گاوں علاقہ میں کانگریس رہنماوں کے اجلاس میں شرکت کریں گے۔ کانگریس صدر اس علاقہ میں شکتی نامی ایک اسکیم کا بھی افتتاح کریں گے جس سے پارٹی کارکنان کے ساتھ سیدھی بات کی جا سکے گی اور درپیش مسائل پر رد عمل لئے جا سکیں گے۔راہل گاندھی نے 7 جولائی 2014 کو مہاراشٹر میں بیان دیا تھا کہ مہاتما گاندھی کے قتل کے ذمہ دار آر ایس ایس کے لوگ ہیں۔ راہل گاندھی کے اس بیان کو لے کر آر ایس ایس کے بھونڈی سکریٹری راجیش کنٹے نے اس بیان کو لے کر راہل گاندھی کے خلاف شکایت درج کرائی تھی۔ آر ایس ایس کا دعوی ہے کہ راہل گاندھی نے اپنے اس بیان سے آر ایس ایس کی شبیہ کو نقصان پہنچایا ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *