ایمبولینس کا آنے سے انکار ،ماں کی لاش بائک سے لیجانے پرمجبور ہوا نوجوان

ایمبولنس نہ ملنے پر بیٹے نے ماں کی لاش کو بائیک پر کسی طرح باندھا اور پوسٹ مارٹم ہاوس تک لے کر پہنچا۔ مدھیہ پردیش میں سرکاری نظام کی اس لاپروائی کو دیکھ کر لوگ حیران ہیں۔
بھوپال: ملک میں محکمہ صحت کی حالت بد سے بدتر ہوتی جارہی ہے اور دسیوں اس طرح کے شرمناک واقعات پیش آجانے کے باوجود کسی طرح کا کوئی سدھا ر نہیں کیا جارہاہے ۔ایک مرتبہ پھر ریاست مدھیہ پردیش میں انہائی افسوسناک واقعہ پیش آیا ہے۔ ذرائع کے طابق ایک نوجوان نے کئی بار فون کیا لیکن سرکاری ایمبولنس نہیں پہنچی جس کے بعد اس نوجوان کو آخر کار اپنی موٹر سائیکل پر ہی لاش کو لے کر پوسٹ مارٹم تک جانا پڑا۔ ماں کی لاش کے ساتھ نوجوان کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد مدھیہ پردیش حکومت اور محکمہ صحت کی سبکی ہو رہی ہے اور لوگ حکوت اور نظام پر جم کر غصہ نکال رہے ہیں۔مقامی میڈیا رپورٹوں کے مطابق ٹیکم گڑھ کے مستاپور گاوں کی رہائشی کنور بائی کی سانپ کے کاٹنے سے موت واقع ہو گئی تھی۔ پولس کیس ہونے کی وجہ سے لاش کا پوسٹ مارٹم کرانا ضروری تھا۔ ایسے حالات میں اس کے بیٹے نے کئی بات سرکاری ایمبولنس بلانے کی کوشش کی لیکن ایمبولنس کی خدمت فراہم نہیں ہو سکی۔

ایمبولنس نہ ملنے پر بیٹے نے ماں کی لاش کو بائیک پر کسی طرح باندھا اور پوسٹ مارٹم ہاوس تک لے کر پہنچا۔ مدھیہ پردیش میں سرکاری نظام کی اس لاپروائی کو دیکھ کر لوگ حیران ہیں۔اس پورے واقعہ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے اور لوگ مددھیہ پردیش حکومت اور محکمہ صحت کو خوب نشانہ بنا رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اس سے بڑی لاپروائی اور بے حسی کی مثال نہیں ملتی۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *