معروف اسلامی اسکالر پروفیسر طارق رمضان کی رہائی کی دوسری اپیل بھی مسترد

ایک خاتون کی طرف سے عصمت ریزی کے دعوے کے بعد چھ ماہ سے فرانس کی ایک جیل میں قید ہیں۔انیس جولائی کو پیرس کی ایک عدالت نے پروفیسر طارق رمضان کی رہائی کے حوالے سے دی گئی درخواست مسترد کردی تھی۔
پیرس(ایجنسیاں)
فرانس کی ایک عدالت نے اخوان المسلمون کے بانی حسن البنا کے پوتے اور سرکردہ مذہبی اسکالر طارق رمضان کی رہائی کی دوسری اپیل بھی مسترد کردی ہے ۔عرب میڈیا کے مطابق عدالتی ذرائع کا کہنا ہے کہ پروفیسر طارق رمضان کی رہائی کے لیے دی گئی درخواست ایک اور خاتون کی طرف سے آبرو ریزی کا الزام سامنے آنے کے بعد مسترد کی گئی ہے۔طارق رمضان ایک خاتون کی طرف سے عصمت ریزی کے دعوے کے بعد چھ ماہ سے فرانس کی ایک جیل میں قید ہیں۔انیس جولائی کو پیرس کی ایک عدالت نے پروفیسر طارق رمضان کی رہائی کے حوالے سے دی گئی درخواست مسترد کردی تھی۔
کریسٹیل نامی دوسری خاتون کی طرف سے یہ دعویٰ 18 جولائی کو سامنے آیا جس کے بعد طارق رمضان کے وکلاءدفاع کی طرف سے ان کی رہائی کےلئے دی گئی درخواست مسترد کردی گئی تھی۔ کریسٹیل کی خرابی صحت کی وجہ سے اس کے کیس کی سماعت 18 ستمبر تک ملتوی کردی گئی ہے۔ دوسری جانب پروفیسر طارق رمضان کے وکلاء نے موقف اختیار کیا تھا کہ ان کے موکل کی صحت خراب ہے۔ اس لیے انہیں فوری طورپررہا کیا جائے مگر خاتون ڈاکٹر نے معائنے کے بعد انہیں تندرست اور جیل کے رہنے کے قابل قرار دیا تھا۔دفاعی وکلا نے طارق رمضان کی 3 لاکھ یورو ضمانت پر مشروط رہائی کی درخواست دی تھی۔

ملت ٹائمز ایک آزاد،غیر منافع بخش ادارہ ہے جس کی آمدنی کا کوئی ذریعہ نہیں۔اسے جاری رکھنے کیلئے مالی مدد درکارہے۔یہاں کلک کرکے تعاون کریں
Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *