شری شری کا فارمولہ یکطرفہ،اقتدار تک رسائی حاصل کرنے کی خاطر رام مند بنانے کیلئے کررہے ہیں وہ جدوجہد ،ملاقات کے بعد مولانا ساجد رشیدی کا اظہار خیال

10

نئی دہلی ۔15مارچ(ملت ٹائمز)
شری شری روی شنکر ایک اچھے انسان ہیں،بظاہر ان کا مقصد بھی نیک لگ رہاہے لیکن ان کا فارمولہ یکطرفہ ہے جس کی بنیاد پر ان سے بابری مسجد ۔رام جنم بھومی تنازع پر بات کرنے کا کوئی حل نکلنا مشکل ہے ۔ان خیالات کا اظہار معروف عالم دین مولانا ساجد رشیدی صدر آل انڈیا امام ایسوسی ایشن نے شری شری روی شنکر سے ملاقات کے بعد ملت ٹائمز سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔
انہوں نے کہاکہ شری شری روی شنکر نے انہیں ملاقات کی دعوت دی تھی اس لئے انہوں نے ملاقات کی لیکن گفتگو کے دوران انہوں نے یکطرفہ بات کی کہ مسلمان بابری مسجد کی جگہ چھوڑ دیں بلکہ وہ گفتگو کا آغاز ہی یہاں سے کرتے ہیں ایسے میں بابری مسجد۔ رام جنم بھومی تنازع پر ان کے فارمولہ سے اتفاق نہیں کیا جاسکتاہے ۔مولانا ساجد رشید ی نے بتایاکہ ہم نے کہاکہ بابری مسجد ۔رام جنم بھومی تنازع ہندوستان کا ایک قدیم اور حساس مسئلہ ہے ،عدلیہ کے باہر اسے حل کرانے کی یہ کوشش اچھی ہے لیکن مصالحت کا یہ فارمولہ یکطرفہ ہے جو درست نہیں ہے ،مصالحت میں ایسی راہ نکالی جائے کہ دونوں فریق کو برابر حق مل سکے اور دونوں فریق اپنی ضدچھوڑ کر ایک زینہ نیچے اتر سکیں ۔
ایک سوال کے جواب میں مولانا ساجد رشیدی نے کہاکہ آل انڈیا مسلم پرسنل لاءبورڈ اور جمعیة علماءہند کی قیادت کو شری شری روی شنکر سے ملاقات کرنی چاہیے تاکہ پتہ چل سکے کہ روی شنکر چاہتے کیا ہیں اور ان کا اصل موقف کیاہے ۔انہوں نے بتایاکہ اس پہل کے بعد کم ازکم مسلمانوں پر یہ الزام نہیں لگتاکہ انہوں نے صلح کی پیشکش ٹھکرادی ہے ۔
ایک اور سوال کے جواب میں مولانا ساجد رشیدی نے بتایاکہ شر ی شری روی شنکر در اصل حکومت کی نظروں میں اپنی اہمیت ثابت کرنے کیلئے یہ پہل کررے ہیں اور یہ حکومت کو اس بات کیلئے خوش کرنا چاہتے ہیں کہ رام مندر بنانے میں انہوں نے کامیابی حاصل کرلی ہے تاکہ اس کے عوض انہیں کوئی بڑا انعام مل سکے اور ہندﺅں کے درمیان ان کی اہمیت رہے ۔انہوں نے بتایاکہ یوگی آدتیہ ناتھ کے وزیر اعلی بننے کے بعد کئی سادھو سنتوں نے بھی اقتدار کا خواب دیکھنا شروع کردیاہے ۔شری شری روی شنکر بھی چاہتے ہیں کہ اس طرح وہ اہمیت ثابت کرکے کرناٹک کے وزیر اعلی کیلئے خود کو اہل ثابت کرسکتے ہیں ۔
واضح رہے کہ مولانا سلمان ندی ۔وسیم رضوی،مولانا توقیر رضا سمیت کئی مسلم لیڈرس شری شری روی شنکر سے اس موضوع پر بات کرچکے ہیں تاہم شری شری روی شنکر کو اپنی کوششوں میں کامیابی نہیں مل رہی ہے ،ذرائع کے مطابق مولانا سلمان ندوی او رشیعہ وقف بورڈ کے چیرمین وسیم رضوی کے طرز عمل سے شری شری روی شنکر کی کوششوں کو جھٹکا لگاہے حالاںکہ مولانا سلمان ندوی اب خود کو سپریم کورٹ کا فیصلہ آنے تک اس معاملہ سے الگ رکھنے کا اعلان کرچکے ہیں ۔