مولانا محمد سالم قاسمی کی رحلت ایک زریں عہد کا خاتمہ: مولانا بدرالدین اجمل قاسمی

9

نئی ہلی۔15اپریل(پریس ریلیز)
علوم نانوتوی کے وارث، خانوادہ¿ قاسمی کے اےک روشن چراغ، دارالعلوم وقف دےوبند کے صدرمہتمم ،جلیل القدر محدث اورجےدعالم دین حضرت مولانا محمد سالم قاسمی نوراللہ مر قدہ کی رحلت کو آل انڈیا یوناے¿ٹیڈ ڈیمو کریٹک فرنٹ کے قومی صدر و رکن پارلیمنٹ مولانا بدرالدین اجمل قاسمی نے ملت اسلامیہ کے لئے ایک عظیم سانحہ قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یقینا قحط الرجال کے اس دور میں حضرت ہم سب کے لئے شجر سایہ دار کی حیثیت رکھتے تھے۔ حضرت اپنی با وقار شخصیت اور پختہ علم کی وجہ سے مر جع خلائق تھے۔ آپ یقینا حضرت حکیم الاسلام رحمہ اللہ کے علمی اور روحانی یادگار اورہمہ جہت شخصیت کے مالک تھے جنہوں نے مختلف میدانوں میں عظیم کارنامے انجام دئےے ہیں۔ دارالعلوم دےوبند اور دارالعلوم وقف دےوبند دونوںکے لئے حضرت نوراللہ مرقدہ¾ کی درسی اور انتظامی خدمات، اسی طرح آ ل انڈیا مسلم پرسنل لا ءبورڈ کے نائب صدر، اورمسلم مجلس مشاورت کے صدر کی حیثیت سے آپ کی خدمات سنہرے الفاظ میں لکھے جانے کے قابل ہیں۔دارلعلوم وقف کی ہمہ جہت ترقی میں آپ نے انتہا ئی اہم کر دار ادا کیا ہے۔مولانا اجمل نے مزید کہا کہ حضرت کی وفات صرف ایک شخص کی رحلت نہیں بلکہ موتُ العالِمِ موتُ العالَم کا مصداق ہے نیزایک زریںعہد کا خاتمہ ہے۔ یقینا پوری امت ایک عظیم محدث اور جلیل القدر شخصیت سے محروم ہو گئی۔غم و اندوہ کی اس نازک گھڑی مےں اللہ ان کو لواحقین کو صبرو حوصلہ عطا کرے اور حضرت کو اعلی علین مےں جگہ عطا فرمائے نیزامت کو ان کو نعم البدل عطا کرے۔