گھر سے باہر پھنسے ہوئے لوگوں کی مدد کیلئے وزیراعلیٰ نتیش کمار ٹھوس قدم اٹھائیں: شاہنواز بدر قاسمی

20

حکومت بہار اپنے شہریوں کی تحفظ کو یقینی بنائیں ورنہ لاکھوں جان جانے کا اندیشہ، ایسے ہیلپ لائن نمبرات جاری کئے جائیں جن پر رابطہ ممکن ہوسکے

سہرسہ: کورونا وائرس کی وجہ پوری دنیا تھم سی گئی ہے جو جہاں ہیں اسے وہیں رہنے کی سخت ہدایت دی گئی ہے ایسے مشکل حالات میں لاکھوں یومیہ مزدور، پرائیوٹ ملازمین اور مدارس وکالج کے ہزاوں طلبہ وطالبات اور اساتذہ جن کاتعلق بہار کے مختلف اضلاع سے ہیں وہ دہلی، مہاراشٹر، گجرات، اترپردیش، تامل تاڈو، کرناٹک، مدھیہ پردیش، تلنگانہ، ہریانہ، راجستھان، اترا کھنڈ سمیت ملک کے مختلف ریاستوں میں پھنسے ہوئے ہیں جن کاکوئی پرسان حال نہیں ہے حد تو یہ ہے بہار کے الگ الگ ضلعوں میں کام کرنے والے لوگ اور طلبہ جو بآسانی اپنے گھر جاسکتے ہیں لیکن حکومت بہار کی سختی اور اجاز ت نہ ملنے کی وجہ سے دانے دانے تک کیلئے ترس گئے ہیں، ایسے تمام پریشان حال لوگوں کی فوری مدد کیلئے بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار کوئی ٹھوس قدم اٹھائیں ورنہ لاکھوں لوگ فاقہ کشی اور خودکشی سے مرنے پر مجبور ہوجائیں گے جو بہار کیلئے بیحد شرمناک اور انتہائی تشویش ناک بات ہے، ان خیالات کا اظہار صحافی و سماجی کارکن شاہنواز بدر قاسمی نے کیا انہوں نے بہار کے وزیر اعلی نتیش کمارسے مطالبہ کیاہے وہ حکومتی سطح پر لوگوں کی مدد کیلئے منظم طریقہ پر ٹیم بنائیں، اب تک بہار سرکارکی طرف سے پھنسے ہوئے لوگوں کیلئے زمینی سطح پر مدد نہیں ہوپارہی ہے جو سرکاری دعوے ہیں، ان کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں ہے، یہ ایک تلخ سچائی ہے کہ اب تک بہارسے تعلق رکھنے والے لوگ کورونا وائرس سے کم اور فاقہ کشی کی وجہ سے زیادہ دم توڑ چکے ہیں، مختلف شہروں کیلئے جو ہیلپ لائن نمبرات جاری کئے گئے وہ سب کے سب فرضی ہیں،ایسے مشکل اور مصیبت کی اس گھڑی میں اپنے شہریوں کی فکر کرنا اور ہرممکن مدد کیلئے عملی اقدامات کرنا حکومت کی اولین ذمہ داری ہے، شاہنواز بدر نے کہا کہ لوک ڈاؤن کی وجہ سے بہار کے اکثر لوگ باہر پھنسے ہوئے ہیں،یومیہ مزدوری،جوب اور مدارس میں پڑھنے والے بچے بیحد پریشانی میں ہیں، بہت سے مستحقین ایسے ہیں جن کو مدد کی فوری ضرورت ہے لیکن ان کی مدد کرنے والا کوئی نہیں ہے، کئی شہروں سے ایسی خبریں بھی آرہی ہیں کہ دوسری ریاستوں میں پھنسے بہار کے لوگوں کو جبراً بھگایا جارہا ہے، ان کے پاس نہ ایک وقت کے کھانے اور علاج کا پیسہ ہے، ایسے میں کیا کریں،سمجھ سے بالاتر ہے، ہم حکومت بہار کے وزیراعلی نیتش کمار اور دیگر اہم ذمہ داران سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ ان لاکھوں ضرورت مندوں کے تعاون کیلئے عملی اقدامات کریں،سرکاری سطح پر ان تمام ریاستوں کے وزیر اعلی اور اہم افسران سے یہ اپیل کی جائے کہ مصیبت زدہ لوگوں کو پریشان نہ کیا جائے اور بہار کے لوگوں کا مکمل خیال رکھا جائے، ایسے تمام لوگ جو بہار اور بہار سے باہر پھنسے ہوے ہیں ان سب کو گھر تک پہنچانے کیلئے حکومت مفت اسپیشل ٹرین اور بس کا انتظام کریں تاکہ لاکھوں لوگوں کی جان بچائی جاسکے۔ شاہنواز بدر نے کہاکہ بہار سرکار اس عالمی قہر کے سبب بہار میں اگلے تین ماہ کیلئے بجلی بل، مکان کرایہ کی معافی کے ساتھ ہر فیملی کیلئے کم از کم دس ہزار کی مدد کو یقینی بنائیں، ساتھ ایمرجنسی سروے کے ذریعہ اب تک جن غریبوں کا راشن کارڈ نہیں بن پایا ہے ان کے را شن کارڈ بنوانے کا بھی بندوبست کریں تاکہ ان حقیقی مستحقین کو بھی سرکاری مدد کا فائدہ مل سکے۔