حیوانت کی تمام حدیں پار ۔چنئی میں 11 سالہ طالبہ کے ساتھ مسلسل 7 مہینے تک اجتماعی عصمت دری

حیوانت کی تمام حدیں پار ۔چنئی میں 11 سالہ طالبہ کے ساتھ مسلسل 7 مہینے تک اجتماعی عصمت دری

اپارٹمنٹ میں ایک 11 سالہ نابالغ بچی کا 7 مہینے تک جنسی استحصال کیا گیا۔ تقریبا 20 افراد ملکر اس گھناﺅنے جرم کو انجام دے رہے تھے جن میں اپارٹمنٹ میں تعینات سکیورٹی گارڈ، لفٹ آپریٹر اور پانی سپلائی کرنے والا شامل ہے
چنئی (احمد علی صدیقیملت ٹائمز)
عصمت دری ،گینگ ریپ اور زنا کی خبر ہندوستان میں اب کوئی تعجب خیز نہیں رہ گئی ہے ،روزانہ دسیوں خبریں گینگ ریپ اور عصمت دری کی میڈیا میں آتی ہے لیکن چنئی میں پیش آنے والے واقعہ نے حیوانیت کی تمام حدیں پا کردی ہے ۔
انڈین ایکسپریس کی رپوٹ کے مطابق چنئی کے ایانورم علاقہ میں واقع اپارٹمنٹ میں ایک 11 سالہ نابالغ بچی کا 7 مہینے تک جنسی استحصال کیا گیا۔ تقریبا 20 افراد ملکر اس گھناﺅنے جرم کو انجام دے رہے تھے جن میں اپارٹمنٹ میں تعینات سکیورٹی گارڈ، لفٹ آپریٹر اور پانی سپلائی کرنے والا شامل ہے۔اپارٹمنٹ میں 7 مہینے لگاتار معصوم سے ریپ ہوتا رہا اور کسی کو اس کی خبر نہیں لگی۔ اطلاعات کے مطابق ملزمان نابالغ بچی کو نشہ کھلا کر بے ہوش کر دیا کرتے تھے اور اپارٹمنٹ کے مختلف حصوں میں لے جاکر حیوانیت کو انجام دیتے تھے۔یہ معاملہ اس وقت سامنے آئی جب بچی نے اپنی بڑی بہن کو پوری واقعہ بتایا اور اپنے اوپر گزرے حالات کا تذکرہ کیا ۔
بچی کی ماں نے خواتین پولس تھانہ میں ایف آئی آر درج کرایاہے جس میں یہ انکشاف ہواہے کہ بچی کے ساتھ پندرہ لوگوں نے مختلف دنوں میں مختلف مقامات پر زبردستی ریپ کیاہے ۔فی الحال اپارٹمنٹ میں کام کرنے والے 17 لوگوں کو حراست میں لیا جاچکاہے ۔تفتیش جاری ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *