اسکول اور مدارس کے مابین جلیج کو پُر کرنا وقت کی اہم ضرورت: مولانا اظہار الحق مظاہری

اسکول اور مدارس کے مابین جلیج کو پُر کرنا وقت کی اہم ضرورت: مولانا اظہار الحق مظاہری

سیتامڑھی: (احمد علی صدیقی) امارت شرعیہ کے زیر اہتمام تحفظ اردو و تعلیمی بیداری کے تعلق سے الجامعۃ العربیہ اشرف العلوم کنہواں (پریہار) میں بلاک سطح پراردو کی بقاء، تحفظ اور ترویج و اشاعت کے حوالے سے بلاک کے صدر مولانا اظہار الحق مظاہری کی صدارت میں اردو تحریک سے وابستہ اہم افراد ، ملی ، سماجی و سیاسی کارکنان، اردو کے اساتذہ دانشوران اور نمائندہ شخصیات کا ایک اہم مشاورتی اجلاس منعقد ہوا، خصوصی مشاورتی اجلاس میں کئی شرکاء نے اپنے مفید مشوروں سے نوازا، تمام شرکاء نے اردو اور دینی و عصری تعلیم کو پیش آئندہ مسائل اور اس کے حل کی تجویز پیش کی، اس موقع پر مولانا اظہار الحق مظاہری نے کہا کہ دینی و عصری دونوں تعلیم وقت کی اہم ضرورت ہے، آپسی و مسلکی اختلاف سے اوپر اٹھ کر اسکول اور مدارس کے مابین جلیج کو پُر کرنا ملت کی اہم ضرورت ہے،نظامت کے فرائض کو انجام دیتے ہوئے مولانا عتیق الرحمن (مکی) نے موجودہ تعلیمی نظام میں جدت اور اردو کو روز گارسےجوڑنے کے لیے اسکول کی سطح سے لیکر یونیورسٹی کی سطح تک نافذ کرنے پر زور دیا، ماہر تعلیم و اردو کے عملی نفاذکیلئے جدوجہد کرنے والے راشد فہمی نے کہا کہ معیاری تعلیم سے نئی نسل کو آراستہ کرنا ہمارا دینی و ملی فریضہ ہے، اردو کے تحظ کے لئے اردو بولنا اور اس کے رسم الخط کو استعمال کرناخود پر لازم کریں، عالم گیر سابق ضلع پارشد نے کہا کہ اس تحریک کو عملی جامہ پہنا نے کیلئے ہم سب کو ایک پنچایت گود لینا ہوگا تب جاکر تحریک کے مثبت نتائج مرتب ہونگے، وہیں مدرسہ رضاء العلوم کنہواں کے استاد مولانا عیسی مصباحی نے اس تحریک کو بصیرت اور دور اندیشی پر مبنی مفید، تعمیری اورمستحن قدم بتاتے ہوئے اس تحریک کو جلا بخشنے اور مسلکی رواداری کے فروغ کے لئے آئندہ 27 فروری کو پریہار میں سبھی مکتب فکر کے لوگوں کی ایک اہم نشت کا اعلان کیا، کنہواں کے فعال و متحرک مکھیا غلام مجتبٰی جیلانی نے کہا کہ تعلیمی بیداری و فروغ اردو کے ساتھ مساجد و مکاتب اور خصوصاً قبرستانوں کا رجسٹریشن کروانا بھی وقت کی اہم ترین ضرورت ہے، پورے تحصیل میں رجسٹریشن کا صرفہ کنہواں کے مکھیا نے اپنی طرف سے دینے کا وعدہ کیا، اس اہم نشست میں پریہار تحصیل کے با اثر حضرات نے شرکت کی جس میں بطور خاص موجودہ مکھیا جیلانی، سابق مکھیا جمن، مولانا غلام رسول، مفتی ثناء الہدی، مولانا نسیم احمد قاسمی، ضیاء الحسن مظاہری، ماسٹر نسیم احمد، مولانا نذیر قاسمی، حیدر علی، حافط احمد اللہ ، محمد گلاب وغیرہ شامل تھے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *