تمل ناڈو میں بھی اویسی نے الیکشن لڑنے کا کیا اعلان!

تمل ناڈو میں بھی اویسی نے الیکشن لڑنے کا کیا اعلان!

آل انڈیا مجلس اتحادالمسلمین کے سربراہ اسدالدین اویسی نے اپنے تازہ بیان میں کہا ہے کہ ’’ہماری پارٹی اب تمل ناڈو میں ہونے والا اسمبلی الیکشن بھی لڑے گی۔‘‘

نئی دہلی: (تنویر) بہار اسمبلی انتخابات اور گجرات میں میونسپل انتخابات کے برآمد نتائج سے خوش اسدالدین اویسی نے اعلان کیا ہے کہ ان کی پارٹی تمل ناڈو اسمبلی انتخابات میں بھی اپنے امیدوار اتارے گی۔ اس اعلان کے ساتھ ہی یہ بھی واضح ہو گیا ہے کہ مجلس یعنی اے آئی ایم آئی ایم (آل انڈیا مجلس اتحادالمسلمین) ملک کی مختلف ریاستوں میں اپنی زمین تلاش کرنے کی مہم تیز کر دی ہے۔ حالانکہ اسدالدین اویسی کے تازہ اعلان سے ایک بار پھر ان پر یہ الزامات لگنے لگے ہیں کہ وہ تمل ناڈو میں سیکولر ووٹوں کی تقسیم کا راستہ ہموار کر رہے ہیں اور اس سے بی جے پی کو ہی فائدہ پہنچے گا۔ کچھ سیاسی ماہرین کا بھی کہنا ہے کہ بہار کے بعد تمل ناڈو میں بھی اویسی ’کھیل‘ کھیلنے والے ہیں، اور اس کا کتنا اثر سیکولر ووٹوں پر پڑے گا، یہ آنے والا وقت ہی بتائے گا۔
اسدالدین اویسی نے اپنے تازہ بیان میں کہا ہے کہ ’’ہماری پارٹی اب تمل ناڈو میں ہونے والے اسمبلی الیکشن بھی لڑے گی۔ ہمارے کچھ امیدواروں نے گجرات میونسپل الیکشن میں جیت حاصل کی ہے جو خوش آئند ہے۔ میں آج پارٹی اراکین کے ساتھ جائزہ لینے اور خطاب کے لیے راجستھان جا رہا ہوں جہاں پارٹی لیڈروں سے میری بات ہوگی۔ ہماری پارٹی کے کارکنان اتر پردیش میں بھی سخت محنت کر رہے ہیں۔‘‘
قابل ذکر ہے کہ مغربی بنگال اسمبلی انتخاب میں بھی مجلس کی طرف سے امیدوار اتارنے کا اعلان اسدالدین اویسی کر چکے ہیں۔ پھرپھرا شریف درگاہ کے پیرزادہ عباس صدیقی نے جب اتوار کو مغربی بنگال کی راجدھانی کولکاتا میں ایک ریلی میں لیفٹ اور کانگریس کے ساتھ اسٹیج شیئر کیا تو یہ اویسی کے لیے جھٹکا تصور کیا گیا، کیونکہ اویسی اس کوشش میں تھے کہ عباس صدیقی کی نوتشکیل پارٹی کے ساتھ ان کا اتحاد ہو جائے گا۔ اس سلسلے میں اویسی کا کہنا ہے کہ ’’میں اکیلا ہی چلا تھا جانب منزل مگر، لوگ ساتھ آتے گئے اور کارواں بنتا گیا۔ میں صحیح وقت آنے پر مغربی بنگال میں پارٹی کی پالیسی کے بارے میں بات کروں گا۔‘‘
واضح رہے کہ جن چار ریاستوں اور ایک مرکز کے زیر انتظام خطہ میں اسمبلی انتخابات کی تاریخوں کا اعلان الیکشن کمیشن آف انڈیا نے گزشتہ دنوں کیا ہے، ان میں تمل ناڈو اور مغربی بنگال دونوں ریاستوں کا نام شامل ہے۔ تمل ناڈو اسمبلی کی مدت کار 31 مئی 2021 کو اور بنگال اسمبلی کی مدت کار 30 مئی 2021 کو ختم ہو رہی ہے۔ تمل ناڈو میں 234 اسمبلی سیٹوں کے لیے ایک مرحلہ میں 6 اپریل کو ووٹنگ ہونی ہے، جب کہ مغربی بنگال میں 294 اسمبلی سیٹوں کے لیے آٹھ مراحل میں ووٹنگ ہوگی۔ دونوں ہی ریاستوں کا نتیجہ 2 مئی کو سامنے آئے گا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *