دہشت گردی کے خلاف جنگ دہرے معیار کے ساتھ نہیں جیتی جا سکتی:طیب اردگان

6

، دہشت گرد تنظیم PKK اور اس کے شام میں بازو پی وائے ڈی/وائے پی جی، داعش، القاعدہ اور نئی نسل کی ہائبدرڈ تنظیم فیتو کے خلاف ہماری جدوجہد پر عزم طریقے سے جاری ہے۔ تا ہم ، بڑے افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جدوجہد میں دہرا معیار تا حال جاری ہے۔

انقرہ(ایجنسیاں)
صدر ِ ترکی کا کہنا ہے کہ بعض ممالک کو انسداد ِ دہشت گردی میں دہرے معیار سے اب باز آجانا چاہیے۔
آک پارٹی کے رہنما و صدر ِ ترکی رجب طیب ایردوان نے اپنی سیاسی جماعت کے مرکزی دفتر میں سفراءکی روایتی افطار پارٹی سے خطاب کیا۔
خطاب میں دہشت گرد تنظیموں کے خلاف بلا کسی رعایت کے جدوجہد کرنے کی اہمیت کا ذکر کرنے والے ایردوان نے بتایا کہ بعض ممالک کو اس معاملے میں دہرے معیار پر عمل درآمد کو ختم کر دینا چاہیے، دہشت گرد تنظیم PKK اور اس کے شام میں بازو پی وائے ڈی/وائے پی جی، داعش، القاعدہ اور نئی نسل کی ہائبدرڈ تنظیم فیتو کے خلاف ہماری جدوجہد پر عزم طریقے سے جاری ہے۔ تا ہم ، بڑے افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جدوجہد میں دہرا معیار تا حال جاری ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ کئی ایک یورپی ممالک ،معصوم انسانوں کا قتل کرنے والوں کے لیے اب محفوظ مقام کی حیثیت اختیار کرتے چلے جا رہے ہیں۔ جہاں وہ بلا کسی ڈر کے زندگی گزار رہے ہیں۔اس طریقے سے دہشت گردی کے خلاف جدوجہد نہیں ہو سکتی، اس نا موزوں صورتحال کو ختم کرتے ہوئے ہم سب کو مشترکہ کوششیں صرف کرنی ہوں گی۔

SHARE