اویسی کو بی جے پی کا چچا جان بتانے پر مجلس برہم، پوچھا - مظفرنگر فساد کے وقت کہاں چھپے تھے ٹکیت؟

اویسی کو بی جے پی کا چچا جان بتانے پر مجلس برہم، پوچھا – مظفرنگر فساد کے وقت کہاں چھپے تھے ٹکیت؟

عاصم وقار نے کہا کہ راکیش ٹکیت کتنے سیکولر ہیں یہ انہیں اور ان کے لوگوں کو بخوبی معلوم ہے۔ 2017 اور 2019 کے انتخابات میں وہ بی جے پی کو جتانے کے لئے کام کر رہے تھے اور ان کے لئے ووٹ مانگ رہے تھے۔

لکھنؤ: اسد الدین اویسی کو کسان لیڈر راکیش ٹکیت کی جانب سے بی جے پی کا چچا جان قرار دینے پر مجلس اتحاد المسلمین برہم ہو گئی ہے اور پارٹی کے ترجمان نے کرارا جواب دیا ہے۔ اویسی کی پارٹی آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے ترجمان سید عاصم وقار نے کہا کہ ٹکیت کا ایک بیان آیا ہے جس میں وہ اویسی صاحب کو بی جے پی کا چچا جان قرار دے رہے ہیں اور انہیں بی جے پی کی ٹیم کا حصہ بتا رہے ہیں۔ لیکن انہیں یہ بتانا چاہئے کہ مظفرنگر فسادات کے وقت ٹکیت کہاں چھپے بیٹھے تھے۔
عاصم وقار نے کہا کہ راکیش ٹکیت کتنے سیکولر ہیں، یہ انہیں اور ان کے لوگوں کو بخوبی معلوم ہے۔ 2017 اور 2019 کے انتخابات میں ٹکیت بی جے پی کو جتانے کے لئے کام کر رہے تھے اور ان کے لئے ووٹ مانگ رہے تھے۔ ٹکیت مسلمانوں کے کندھے پر بیٹھ کر سیاسی سفر طے کرنا چاہ رہے ہیں۔ آج آپ اسٹیج پر چڑھ کر جاٹوں کی طرف سے اللہ اکبر کے نعرے بلند کر رہے ہیں لیکن جب مظفر نگر میں فسادات ہوئے تھے تو ٹکیت کہاں چھپ کر بیٹھے تھے۔ اس وقت لوگ نعرے لگاتے ہوئے قتل عام میں ملوث تھے۔
وقار کے مطابق ٹکیت نے اس وقت کوئی امن کے لئے اپیل نہیں کی تھی۔ آج ٹکیت ہمیں بی جے پی کی بی ٹیم قرار دے رہے ہیں۔ ادھر کانگریس نے ٹکیت کے بیان کی حمایت کی ہے۔ کانگریس کے مقامی لیڈران نے کہا ہے کہ بی جے پی کے لئے ماحول تیار کرنے کی غرض سے اویسی جگہ جگہ پہنچ رہے ہیں۔
خیال رہے کہ باغپت میں ایک جلسہ عام کے دوران 14 ستمبر کو ٹکیت نے کہا تھا کہ بی جے پی کے چچا جان اسد الدین اویسی یوپی میں گھس آئے ہیں۔ اگر اویسی بی جے پی کے خلاف بھی بولیں گے تو بھی ان کے خلاف کوئی کیس درج نہیں ہوگا۔ قبل ازیں، 5 ستمبر کو مظفر نگر مہاپنچایت کے وقت راکیش ٹکیت نے اسٹیج سے ہندو-مسلم اتحاد کی بات کی تھی اور بی جے پی کو ہرانے کے لئے سبھی سے یکجا ہونے کی اپیل کی تھی۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *