بہار اسمبلی میں اگنی پتھ پر ہنگامہ جاری، اپوزیشن لیڈران کی نعرہ بازی

بہار اسمبلی میں مانسون اجلاس کے تیسرے دن بھی اگنی پتھ اسکیم کو لے کر ہنگامہ جاری رہا۔ اہم اپوزیشن پارٹی آر جے ڈی نے صاف کر دیا ہے کہ وہ اگنی پتھ ایشو کو نہیں چھوڑنے والی۔ منگل کو بہار اسمبلی احاطہ میں داخل ہوتے ہی آر جے ڈی، کانگریس اور سی پی ایم اراکین اسمبلی نے نوجوانوں کو روزگار دینے اور اگنی پتھ اسکیم کو واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے تختیاں لے کر مظاہرہ شروع کر دیا۔

اس سے قبل پیر کو اپوزیشن پارٹیوں نے اس منصوبہ کو واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے ایوان میں خوب ہنگامہ کیا تھا۔ اپوزیشن پارٹیوں کے اراکین ویل میں جا کر منصوبہ کی مخالفت کرتے ہوئے نظر آئے۔ شور شرابہ کے درمیان اسمبلی اسپیکر وجئے کمار سنہا لگاتار ناراض اراکین اسمبلی کو ہنگامہ بند کرنے کی اپیل کرتے رہے، لیکن ان پر اس کا کوئی اثر نہیں ہوا۔ اپوزیشن پارٹیوں کے اراکین اگنی پتھ اسکیم کو واپس لینے کا مطالبہ کر رہے تھے۔

غور طلب ہے کہ مرکزی وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کے ذریعہ 15 دن قبل اگنی پتھ اسکیم کا اعلان کیا گیا تھا۔ اس کے اگلے دن سے ہی پورے ملک میں اس اسکیم کو لے کر مظاہرہ شروع ہو گیا۔ بہار میں بھی پرتشدد مظاہرے ہوئے۔ بی جے پی کے کئی لیڈران کو مظاہرین نے اپنا نشانہ بھی بنایا تھا۔ احتجاجی مظاہرہ کے نام پر مظاہرین نے دو اضلاع میں بی جے پی دفتر میں آگ لگا دی تھی جب کہ نائب وزیر اعلیٰ رینو دیوی اور بی جے پی ریاستی صدر سنجے جیسوال سمیت کئی سینئر لیڈروں کے گھروں اور گاڑیوں کو بھی نشانہ بنایا گیا تھا۔

SHARE
ملت ٹائمز میں خوش آمدید ۔ اپنے علاقے کی خبریں ، گراﺅنڈ رپورٹس اور سیاسی ، سماجی ،تعلیمی اورادبی موضوعات پر اپنی تحریر آپ براہ راست ہمیں میل کرسکتے ہیں ۔ millattimesurdu@gmail.com