عیدگاه میدان تنازعہ: گنیش اتسو کی اجازت نہیں دی تو نماز پڑھنے پر بھی سوال اٹھے گا، بی جے پی لیڈر سی ٹی روی

بنگلورو: عیدگاہ میدان کے حوالہ سے جاری تنازعہ کے درمیان بی جے پی کے قومی جنرل سیکریٹری سی ٹی روی نے بدھ کے روز کہا کہ اگر میدان میں گنیش اتسو نہیں منایا جا سکتا، تو وہاں نماز ادا رکنے کی اجازت پر بھی سوال اٹھایا جائے گا۔ بی جے پی کے رکن اسمبلی نے کہا کہ عیدگاہ میدان محکمہ محصولات کی اراضی ہے، لہذا زمین سے وابستہ فیصلے اسی کو لینے ہوں گے۔

سی ٹی روی نے کہا ”جب عیدگاہ میدان میں گنیش کی مورتی نصب کرنے کی اجازت نہیں دی جاتی تو یہ حقوق کا معاملہ بن جائے گا۔ محکمہ محصولات کو اجازت دینے پر غور کرنا ہوگا۔ اور میں کہوں گا کہ اجازت دی جانی چاہئے۔”

انہوں نے کہا ”میں عہدیداران سے گنیش اتسو کے لئے اجازت فراہم کرنے کی گزارش کرتا ہوں۔ اگر اسے نامنظور کیا جاتا ہے، تو سوال اٹھائے جائیں گے کہ وہاں نماز ادا کرنے کی اجازت کیسے دی جا سکتی ہے؟ اگر نماز کی اجازت ہے، تو گنیش اتسو کی کو بھی جازت دی جانی چاہئے۔”

خیال رہے کہ ملک میں 31 اگست سے گنیش اتسو منایا جائے گا اور ہندو تنظیمیں عیدگاہ کے میدان پر تہوار منانے کی تیار کر ہی ہیں۔ وہیں، کانگریس کے رکن اسمبلی ضمیر احمد خان نے کہا کہ عیدگاہ میدان پر گنیش اتسو منانے کی جازت نہیں دی جانی چاہئے۔

SHARE
ملت ٹائمز میں خوش آمدید ۔ اپنے علاقے کی خبریں ، گراﺅنڈ رپورٹس اور سیاسی ، سماجی ،تعلیمی اورادبی موضوعات پر اپنی تحریر آپ براہ راست ہمیں میل کرسکتے ہیں ۔ millattimesurdu@gmail.com