کورونا کے تازہ قہر سے سہمے چین نے دنیا کا سب سے بڑا الیکٹرانکس ہول سیل مارکیٹ بند کیا

چین میں ایک بار پھر کورونا وائرس کے بڑھتے معاملوں کو دیکھتے ہوئے وبا کی تازہ لہر کا اندیشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ حکومت نے بڑھتے قہر کو روکنے کے لیے لاک ڈاؤن کے حصے کی شکل میں شینزین کے جنوبی ٹیکنالوجی سنٹر ہواکیانگ بیئی واقع دنیا کے سب سے بڑے الیکٹرانکس ہول سیل مارکیٹ کو چار دنوں کے لیے بند کر دیا ہے۔

ساؤتھ چائنا مارننگ پوسٹ نے بتایا کہ ہواکیانگ بیئی میں کاروباری سرگرمی کی معطلی شینزین حکومت کے ذریعہ قہر کو روکنے کے لیے شروع وسیع ترکیبوں کی ایک سیریز کا حصہ ہے۔ حالانکہ بند ہونے سے نئے مسائل پیدا ہو گئے ہیں، کیونکہ ہائی ٹیک صنعت کا 2020 میں شینزین کی مجموعی ملکی پیداوار میں 20 فیصد حصہ تھا۔

ایک عالمی الیکٹرانکس سورسنگ سنٹر ہواکیانگ بیئی ضلع کو پیر سے جمعرات تک بند کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ سپرمارکیٹ، ریستوراں اور فارمیسیز جیسے ضروری کاروباروں کو چھوڑ کر متاثرہ سیکٹرس کی سبھی دکانوں کو بند کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ”ریستوراں کو صرف ٹیک اَوے فراہم کرنے کی اجازت ہے۔ سبھی ڈائن اِن سروسز کو معطل کر دیا گیا ہے۔”

1.7 کروڑ سے زیادہ کے شہر شینزین نے مارچ میں ایک ہفتہ کے اندر کووڈ-19 کے قہر کو روکنے میں کامیابی حاصل کی اور اسے اثردار حکومت کے ایک ماڈل کی شکل میں مشہور کیا گیا۔ مقامی رپورٹ کے مطابق پیر کو شینزین میں کووڈ-19 کے گیارہ مصدقہ معاملوں کا پتہ چلا، جس سے 24 میٹرو اسٹیشنوں کو بند کر دیا گیا اور فوٹین ضلع میں لاک ڈاؤن لگا دیا گیا۔ لوؤہو میں گوئیان، ننھو اور سنگنگ علاقوں میں بھی مکمل لاک ڈاؤن لگا دیا گیا ہے۔ کئی علاقوں میں اسکول بند کر دیئے گئے اور آن لائن تعلیم شروع کر دی گئی ہیں۔

SHARE
ملت ٹائمز میں خوش آمدید ۔ اپنے علاقے کی خبریں ، گراﺅنڈ رپورٹس اور سیاسی ، سماجی ،تعلیمی اورادبی موضوعات پر اپنی تحریر آپ براہ راست ہمیں میل کرسکتے ہیں ۔ millattimesurdu@gmail.com