دہلی ہائی کورٹ نے آبکاری پالیسی معاملے کی غلط رپورٹنگ کرنے پر زی سمیت 5 ٹی وی نیوز چینلوں کو نوٹس جاری کیا

نئی دہلی: ہائی کورٹ نے پیر کے روز پانچ ٹی وی نیوز چینلوں کو دہلی آبکاری پالیسی معاملے میں مبینہ طور غلط رپورٹنگ کرنے پر نوٹس جاری کیا ہے۔ ساتھ ہی نیوز براڈ کاسٹنگ اینڈ ڈیجیٹل اسٹینڈرڈ اتھارٹی (این بی ڈی ایس اے) کو یہ جانچ کرنے کی ہدایت دی کہ یہ چینل ضروری گائیڈلائنس پر عمل کرتے ہیں یا نہیں۔ جسٹس یشونت ورما آپ کے سابق مواصلات انچارج اور بزنس مین وجئے نایر کے ذریعہ داخل ایک عرضی پر سماعت کر رہے تھے، جس میں الزام لگایا گیا ہے کہ معاملے کے بارے میں حساس جانکاری ای ڈی اور سی بی آئی کے ذریعہ میڈیا میں لیک کی گئی تھی۔

قومی آواز کی رپورٹ کے مطابق سماعت کے دوران عدالت نے معاملے کے ٹیلی کاسٹ پر عدم اطمینان ظاہر کیا، جس میں انڈیا ٹوڈے اور ریپبلک ٹی وی سمیت پانچ نیوز چینلز کے ذریعہ عام آدمی پارٹی کے کئی لیڈروں کو ملزم بتایا گیا تھا۔ مبینہ غلط رپورٹنگ کو لے کر زی نیوز اور ٹائمز ناؤ کو بھی نوٹس جاری کیے گئے ہیں۔

اس سے قبل عدالت نے جانچ ایجنسیوں سے ان کے ذریعہ جاری معاملے سے متعلق سبھی پریس ریلیز ریکارڈ پر رکھنے کو کہا تھا۔ عدالت کے حکم کے جواب میں ای ڈی نے بتایا کہ اس نے کوئی پریس ریلیز جاری نہیں کی ہے، جبکہ سی بی آئی نے کہا کہ اس نے جانچ سے متعلق تین ریلیز جاری کی ہیں۔

SHARE
ملت ٹائمز میں خوش آمدید ۔ اپنے علاقے کی خبریں ، گراﺅنڈ رپورٹس اور سیاسی ، سماجی ،تعلیمی اورادبی موضوعات پر اپنی تحریر آپ براہ راست ہمیں میل کرسکتے ہیں ۔ millattimesurdu@gmail.com