اسرائیلی فوجیوں کی جارحیت جاری، ایک نہتی فلسطینی خاتون کو گولیاں مار کر شہید کردیا

5

بیت لحم: کل اتوار کی شام اسرائیلی فوجیوں‌نے فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے جنوبی شہر بیت لحم میں ایک 60 سالہ فلسطینی خاتون رحاب محمد موسیٰ خلف زعول کو گولیاں ماریں جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہوگئیں۔ اسے اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ دیا۔ دوسری طرف اسرائیلی فوج نے حسب معمول نہتی فلسطینی خاتون پرگولی چلانے کو جواز فراہم کرنے کےلیے دعویٰ کیاہے کہ فلسطینی خاتون چاقو سے حملے کی منصوبہ بندی کررہی تھی۔
شہید ہونے والی خاتون کا تعلق غرب اردن کے جنوبی شہر بیت لحم کے نواحی علاقے نحالین سے ہے۔
اسرائیلی ذرائع ابلاغ کے مطابق زخمی ہونے والی فلسطینی خاتون کو ‘شعاری تزیدک’ اسپتال منتقل کیا گیا تھا جہاں وہ دم توڑ گئی ہیں۔
اس واقعے کی ایک ویڈیو فوٹیج بھی سامنے آئی ہے جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ اسرائیلی فوجی ایک خاتون پر بندوق تانے ہوئے ہیں اور اسے پیچھے ہٹنے کا کہہ کررہے ہیں۔ خاتون نہتی ہے اور اس کے میں ایسی کوئی چیز دکھائی نہیں دیتی۔
اسرائیل کے طبی ذرائع کے مطابق اسرائیلی فوجیوں‌نے فلسطینی خاتون کےسرمیں گولی ماری جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہوگئی تھی۔ اسے بیت المقدس کے ایک اسپتال لایا گیا جہاں وہ جام شہادت نوش کرگئی۔
قابض فوج کی ہدایات کے مطابق عبرانی میڈیا نے بھی فلسطینی خاتون کو مسلح قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس کے قبضے سے ایک چاقو برآمد کیا گیا ہے تاہم اسرائیلی فوج اور عبرانی میڈیا کے اس دعوے کی تصدیق نہیں ہو سکی ہے۔