اسرائیل اور فلسطین کے درمیان جنگ بندی پر اتفاق ، حماس نے کہا یہ ہماری جیت ہے!

5

مقبوضہ بیت المقدس: (ملت ٹائمز) 11 دن کے حملوں اور خون ریزی کے بعد اسرائیل اور حماس میں جنگ بندی ہوگئی ہے۔
ہندوستانی وقت کے مطابق جنگ بندی پر عمل درآمد کا آغاز آج صبح ساڑھے چار بجے سے ہوگیا ہے اور اب تک کوئی خلاف ورزی نہیں کی گئی ہے۔
اسرائیلی میڈیا کا دعویٰ ہے کہ اسرائیلی کابینہ نے امریکا کی طرف سے شدید دباؤ کے بعد جنگ بندی کا فیصلہ کیا ہے۔حماس کا دعوی ہے کہ یہ ہماری جیت ہے۔ حماس نے جنگ بندی کیلئے دو شرطیں بھی رکھی تھی کہ شیخ جرح میں یہودی بازآبادکاری کو روک دیا جائے اور مسجد اقصی کے احاطہ سے اسرائیلی فوج اور پولیس کو دور رکھا جائے۔
11دن میں اسرائیلی حملوں کے دوران 232 فلسطینی شہید اور 1900 سے زائد زخمی ہوئے، شہداء میں 65 بچے اور 39 خواتین بھی شامل ہیں جبکہ1 لاکھ 20 ہزار سے زائد افراد کے گھر ملبے کا ڈھیر بن گئے۔حماس کے حملوں میں 12 اسرائیلی بھی مارے گئے ہیں اور متعدد مکانات زمین بوس ہوئے ہیں۔
اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے جنگ بندی کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیلی اور فلسطینی قیادت کی ذمےداری ہے جنگ کے بنیادی اسباب پر غور کے لیے بات چیت کریں۔
جنگ بندی کا اعلان ہونے کے بعد مقبوضہ بیت المقدس میں مسلمان سڑکوں پر نکل کر فتح کا جشن منارہے ہیں۔ مسجد اقصی میں بھی بڑی تعداد میں فجر کی نماز کیلئے جمع ہوئے فلسطینیوں نے اللہ اکبر کا نعرہ بلند کیا اور خوشگوار ماحول میں نماز فجر ادا کی۔