افغان فورسز کی پسپائی کا ذمہ دار اشرف غنی، افغانستان کو ذاتی جاگیر کی طرح چلایا: سابق افغان سفیر

20

ڈاکٹر عمر ذاخیل وال نے اپنے بیان میں اشرف غنی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ افغان صدر نے ملک کو اپنی ذاتی جاگیر کی طرح چلایا، سیاسی سازشوں کے ذریعے اپنے اقتدار کو طول دیا اور امن کے کئی مواقع ضائع کیے۔
کابل: پاکستان میں افغانستان کے سابق سفیر ڈاکٹر عمر ذاخیل وال نے افغان فورسز کی پسپائی کا ذمہ دار صدر اشرف غنی کو قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اشرف غنی نے افغانستان کو ذاتی جاگیر سمجھتے ہیں اور سازش کے تحت اپنے اقتدار کو طول دیا۔
ڈاکٹر عمر ذاخیل وال نے ٹوئٹر پر جاری بیان میں اشرف غنی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ افغان صدر نے ملک کو اپنی ذاتی جاگیر کی طرح چلایا، سیاسی سازشوں کے ذریعے اپنے اقتدار کو طول دیا اور امن کے کئی مواقع ضائع کیے۔
انہوں نے لکھا کہ اشرف غنی نے خود کو ملک کا سب سے بڑے رہنما دکھانے کے لیے میڈیا اور سوشل میڈیا پر سرکاری وسائل استعمال کیے، بد انتظامی، سیاسی سازشوں، آئین کی خلاف وزریوں اور طاقت کے غلط استعمال کر کے اشرف غنی نے اپنے اقتدار کو طول دیا۔
سابق سفیر نے کہا کہ آج ان کا ملک بقا کی جنگ لڑ رہا ہے تو اس کا ذمہ دار اشرف غنی ہے کیونکہ افغان فورسز تذبذب کا شکار ہوئیں کہ آیا وہ ملک کی بقا کے لیے لڑ رہی ہیں یا پھر اشرف غنی کے اقتدار کو طول دینے کے لیے۔ انہوں نے کہا کہ اشرف غنی کے برسرِاقتدار ہوتے ہوئے افغانستان میں امن نہیں ہوسکتا، صدر نے امن کے لیے کئی مواقع ضائع کیے ہیں۔