افغانستان: محرم جلوس کے درمیان کابل میں بم دھماکہ، 8 افراد کی موت، حملے کی ذمہ داری داعش نے قبول کی

کابل: افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ایک شیعہ اکثریتی علاقہ میں جمعہ کے دن ہوئے ایک بم دھماکہ ہوا جس میں آٹھ افراد ہلاک اور سے18 سے زائد زخمی ہو گئے، اموات میں اضافہ کا امکان ہے۔ داعش نے اس دھماکے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

کابل پولیس کے ترجمان خالد زردان نے ایک بیان میں بتایا کہ سرائے کارز علاقے میں یہ دھماکہ اس وقت ہوا جب افغانستان میں اہل تشیع برادری کے لوگ محرم کی یاد منا رہے تھے۔ داعش نے اپنے ایک ٹیلی گرام چینل پر کہا کہ اس کے جنگجوؤں نے ‘بم دھماکہ’ کیا۔ داعش نے دعویٰ کیا کہ اس تازہ حملے میں کم از کم 20 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ افغانستان میں طالبان حکومت کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ایک ٹویٹ کر کے بتایا کہ شہریوں کے درمیان موجود ایک ٹھیلے پر دھماکہ خیز مواد نصب کر کے دھماکہ کیا گیا جس کے نتیجے میں آٹھ افراد ہلاک ہو گئے۔

SHARE
ملت ٹائمز میں خوش آمدید ۔ اپنے علاقے کی خبریں ، گراﺅنڈ رپورٹس اور سیاسی ، سماجی ،تعلیمی اورادبی موضوعات پر اپنی تحریر آپ براہ راست ہمیں میل کرسکتے ہیں ۔ millattimesurdu@gmail.com