کویت کے ایک سرکردہ عالم دین نے اسرائیل کے ساتھ تجارت کرنے والی عرب کمپنیوں کے بائیکاٹ کرنے کا کیا مطالبہ

8

کویت: (ایجنسیاں) کویت کے ایک سرکردہ عالم دین اور دانشور الشیخ طارق السویدان نے اسرائیل کے ساتھ تجارت کرنے اور لین دین کرنے میں‌ ملوث عرب ملکوں کی کمپنیوں کے بائیکاٹ کا مطالبہ کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ فلسطینیوں کے خیر خواہ اسرائیل کے ساتھ تجارت کرنے والی کمپنیوں اور شخصیات کا بائیکاٹ کریں تاکہ انہیں بھی معاشی طور پر نقصان پہنچایا جا سکے۔

کویتی عالم دین نے ان خیالات کا اظہار کویت کی ایک غیر سرکاری تنظیم کویت رابطہ گروپ برائے فلسطین اور اسرائیلی بائیکاٹ کی جانب سے منعقدہ ایک سیمینار سے خطاب میں کیا۔

الشیخ السویدان کا کہنا تھا کہ بائیکاٹ صرف اسرائیل کو تسلیم کرنے والے ملکوں اور حکومتوں کا نہ کیا جائے بلکہ بائیکاٹ ان تمام کمپنیوں اور اداروں کا بھی ہونا چاہیے، جو اسرائیل کے ساتھ تجارت کر رہی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ عرب ممالک کے اقوام نے اسرائیل کے ساتھ تعلقات کو مسترد کردیا ہے۔ اگر عرب ممالک کے اقوام اسرائیل کے ساتھ تجارت کرنے والی کمپنیوں کا بائیکاٹ کریں تو ان کمپنیوں کو 30 کروڑ ڈالر کا نقصان پہنچایا جاسکتا ہے۔

السویدان نے مزید کہا کہ ہم مسلسل یاد دہانی کراتے اور توجہ دلاتے رہیں گے۔ اسرائیل کے ساتھ تعلقات استوار کرنے والے ہر ادارے، فرد، تنظیم اور کمپنی کا بائیکاٹ کیا جانا چاہیے اور اس سوچ کو پورے عالم اسلام میں عام کرنا چاہیے۔