معروف مبلغ عمر گوتم اور قاضی جہانگیر گرفتار، یو پی پولس نے مذہب تبدیل کرانے کا الزام عائد کیا

معروف مبلغ عمر گوتم اور قاضی جہانگیر گرفتار، یو پی پولس نے مذہب تبدیل کرانے کا الزام عائد کیا

نئی دہلی: (ملت ٹائمز) معروف مبلغ اور اسلامک دعوہ سینٹر کے چیرمین جناب عمر گوتم کو یوپی اے ٹی ایس نے گرفتار کرلیاہے ۔ ان کے ساتھ قاضی جہانگیرکو بھی گرفتار کیاگیا ہے ۔ یوپی اے ٹی اے ایس نے دونوں شخصیات پر مذہب تبدیل کرانے کا الزام عائد کیاہے ۔
جناب عمر گوتم اور قاضی جہانگیر سے پچھلے تین دنوں سے پوچھ تاچھ جاری تھی ۔تفصیلات کے مطابق 18 جون کو عمر گوتم کے پاس غازی آباد پولس اسٹیشن سے فون آیاتھا کہ آپ تھانہ آئیں کچھ پوچھ تاچھ کرنی ہے وہاں جانے کے بعد ان سے پوچھ تاچھ ہوئی کہ آپ کیا کرتے ہیں،اس کے بعد کہاگیا کہ آپ پاسپورٹ ، بینک ڈیٹیسل اور ضروری کاغدات لیکر آئیں ۔ 19جون کو عمر گوتم صاحب سبھی کاغذات لیکر وہاں پہونچے اس کے بعد انہیں لکھنو لے جایاگیا جہاں لگاتار تین دنوں تک پوچھ تاچھ کے بعد 21جون کی صبح اے ڈی جی لاءاینڈ آڈر کی ہدایت پر یوپی اے ٹی ایس نے کیس ردج کرکے دونوں کو گرفتار کرلیاہے اور کئی سنگین الزام میں عائد کیا ہے کہ یہ غیر قانونی طریقہ سے لوگوں کا مذہب تبدیل کراتے تھے ۔ پیسہ اور ملازمت کی لالچ دیتے تھے ۔ باہرملکوں سے بھی فنڈنگ ہوتی تھی ۔
واضح رہے کہ عمر گوتم صاحب پہلے شیام پرساد گوتم تھے ۔ اسلام قبول کرنے کے بعد وہ دعوت کے کام سے جڑگئے اور ہندوستانی آئین کے مطابق وہ اپنی سرگرمیاں انجام دے رہے تھے ۔مکمل ثبوت اور ڈوکومینٹ کے ساتھ وہ یہ کام کررہے تھے ۔غیر قانونی طریقہ سے مذہب تبدیل کرانے کا الزام اور بیرونی فنڈنگ غلط اور جھوٹ ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *