سیمانچل: یاس طوفان سے اور مسلسل بارش سے عام زندگی درہم برہم

23

گردابی طوفان یاس جو بنگال کی خلیج سے شروع ہوا ہے اس کا اثر بنگال سرحد سے متصل خطہ سیمانچل میں زبردست دیکھنے کو مل رہا ہے۔ سیمانچل کے کشن گنج، پورنیہ، کٹیہار، ارریہ سمیت کوسی کے سہرسہ، سپول اور مدھے پورہ یاس طوفان کی پوری طرح سے زد میں ہے۔
گردابی طوفان یاس کے اثر کی وجہ سے ارریہ میں گزشتہ 24 گھنٹے سے تیز ہوا اور گرج چمک کے ساتھ مسلسل ہو رہی بارش نے یہاں کے عام لوگوں کی زندگی کو مفلوج کردیا ہے۔
بارش سے یہاں کی ندیوں میں بھی زبردست طغیانی دیکھنے کو مل رہی ہے، ایسی امید کی جا رہی ہے کہ اگر تین سے چار دن لگاتار بارش ہوئی تو ارریہ ضلع قبل از وقت سیلاب کی زد میں ہوگا اور اس کے لئے ضلع انتظامیہ کی جانب سے اب تک کوئی نظم نہیں ہے۔
ارریہ میں ہو رہی شدید بارش سے یہاں کا موسم حرارت کافی گر گیا ہے جس وجہ سے عوام اپنے گھروں کے اندر دبکے ہوئے ہیں۔ کچھ روز قبل جہاں کورونا گائیڈ لائن کے مطابق صبح چھ بجے سے دس بجے تک مارکٹ کھولنے کی اجازت کے بعد لوگوں کی بھیڑ دیکھی جاتی تھی، وہیں مارکٹ آج سنسان پڑا ہوا ہے۔
گاؤں و شہر کی سڑکوں پر سناٹا ہے، ضلع انتظامیہ نے طوفان سے متعلق 30 مئی تک لوگوں کو الرٹ جاری کیا ہوا ہے اور اس دوران گھروں سے باہر نہ نکلنے کی اپیل کی گئی ہے۔
مسلسل ہو رہی بارش سے سب سے زیادہ نقصان کسان طبقہ کو ہو رہا ہے، مکئی کی فصل سے ان کی پریشانیوں کا سلسلہ بدستور بڑھتا ہی جا رہا ہے۔
کسانوں کے مطابق اس وقت مکئی کی فصل اپنے کھیتوں میں پروان پر ہے، مگر لگاتار ہو رہی بارش نے تیار مکئی اور اس کے دانے کو متاثر کر دیا ہے۔ ارریہ میں مکئی کی فصل بڑے پیمانے پر ہوتی ہے، ایسے میں بارش سے فصل کی بربادی سے کسان طبقہ مایوس اور فکرمند ہے۔