بی جے پی حکومت نے جی ایس ٹی کو خراب قانون میں بدل دیا: چدمبرم

بی جے پی حکومت نے جی ایس ٹی کو خراب قانون میں بدل دیا: چدمبرم

پی چدمبرم نے کہا کہ جی ایس ٹی کو اس طرح نافذ کیا گیا تھا جیسے ٹیکس جمع کرنے والے افسر لومڑیوں کا شکار کر رہے ہوں۔ ہر کاروباری کو ٹیکس چوری کرنے والے مشتبہ کی شکل میں دیکھا جانے لگا۔
سابق مرکزی وزیر مالیات اور کانگریس کے سینئر لیڈر پی چدمبرم نے مرکز کی مودی حکومت پر جی ایس ٹی کو ’خراب قانون‘ میں بدلنے کا الزام عائد کیا ہے اور کہا ہے کہ اسے ٹیکس کی خوفناک شرحوں کے ساتھ نوٹیفائیڈ کیا گیا تھا۔ بدھ کو ایک بیان میں میں کہا کہ ’’جی ایس ٹی ایک اچھی سوچ کی شکل میں شروع ہوا، بی جے پی نے اسے ایک برے قانون میں بدل دیا۔ اسے ٹیکس کی خوفناک شرحوں کے ساتھ نافذ کیا گیا۔‘‘
سینئر کانگریس لیڈر نے کہا کہ قانون کو اس طرح نافذ کیا گیا تھا جیسے ٹیکس جمع کرنے والے افسران لومڑیوں کا شکار کر رہے ہوں۔ ہر کاروباری کو ٹیکس چوری کرنے والے مشتبہ افراد کی شکل میں دیکھا جانے لگا۔ جی ایس ٹی کونسل کو ایک بات کرنے والی دکان میں بدل دیا گیا تھا۔
اس سے قبل کانگریس حکمراں ریاستوں کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت اور بھوپیش بگھیل نے جی ایس ٹی کونسل جی او ایم میں کانگریس حکمراں ریاستوں کے اراکین کو شامل نہیں کرنے کے لیے مرکز کی تنقید کی تھی۔ چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپیش بگھیل نے کانگریس حکمراں ریاستوں کے اراکین کو پینل میں شامل نہیں کرنے کو ’کوآپریٹو فیڈرلزم کے جذبہ کے خلاف‘ قرار دیا۔ بھوپیش بگھیل نے کہا کہ ’’جی ایس ٹی کونسل نے وزراء کے آٹھ رکنی پینل کی تشکیل کی ہے جس میں کانگریس حکمراں ریاستوں کے کسی بھی رکن کو شامل نہیں کیا گیا ہے، جو کہ افسوسناک ہے۔‘‘

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *