وزن 2026 کا واٹر پروجیکٹ بچا رہا ہے سیکڑوں زندگیاں، 3000 سے زائد پروجیکٹ ہوئے مکمل

وزن 2026 کا واٹر پروجیکٹ بچا رہا ہے سیکڑوں زندگیاں، 3000 سے زائد پروجیکٹ ہوئے مکمل

ہم لوگوں کو بیماریوں سے بچانے کے لیے پینے کا صاف پانی مہیا کرا تے ہیں: آصف انور

نئی دہلی: (پریس ریلیز ) کیا آپ کو معلوم ہے ہندوستان کے 97 ملین گھروں میں پینے کا صاف پانی دستیاب نہیں ہے ؟ راجستھان ، ہریانہ ، مغربی بنگال ، مدھیہ پردیش ، جھارکھنڈ ، چھتیس گڑہ کے کچھ علاقے شدید مسائل کاشکار ہیں ، دہلی سے متصل ہریانہ کے میوات میں لگ بھگ دس کلومیٹر پر مشتمل کا ایک علاقہ پینے کے صاف پانی کے شدید مسائل سے دوچار ہے ۔
ان سبھی علاقوں میں پینے کا صاف پانی مہیا کرانے کے لیے وزن 2026 مسلسل کام کر رہا ہے ۔ دہلی کے قریب ہریانہ کے مروڑا میوات میں پانی کے دو بڑے پروجیکٹ لگائے گئے ہیں جس سے اطراف و جوانب میں پینے کا صاف پانی ٹینکروں کے ذریعے روازانہ پہونچایا جاتا ہے ۔ اس کے علاوہ 40 ہنڈ پمپ بھی لگائے گئے ہیں ۔ میوات کے اس علاقے میں لوگ اپنے گھروں کے باہر پ سے پانی منگواتے ہیں اور اسے اپنے گھروں پر بنے پانی کے ٹینکوں میں جمع کرکے ہفتوں رکھتے ہیں اور وہی اپنی سبھی ضرورتوں کے لیے استعمال کرتے ہیں ، جمع پانی میں جراثیم کے سبب بیماریاں پیدا ہوتی ہیں ۔
واٹر پروجیکٹ مینجر آصف انور نے بتایا کہ پینے کا صاف پانی مہیا کرانے کا ہمارا یہ پروگرام کئی ریاستوں میں جاری ہے ۔ ہم غربت کے شکار لوگوں کو بیماریوں سے بچانے کے لیے ایسی آبادیوں میں پینے کا صاف پانی مہیا کرا تے ہیں ۔ ہم پہلے مقام کا سروے کرتے ہیں جہاں جیسی صورت حال ہوتی ہے وہاں اسی طرح کے پروجیکٹ لگائے جاتے ہیں جس میں ہینڈ پمپ ، کوئیں ،اور آراو واٹر پروجیکٹ شامل ہیں ۔
مروڑا کا یہ علاقہ دس کلومیٹر کی پٹی پر مشتمل ہے جہاں زیر زمین پانی بمشکل دستیاب ہے ۔ مغربی بنگال کے ہاوڑہ دیناج پور خطے میں 20 ہینڈ پمپ لگائے گئے ہیں جس سے 300 افراد مستفید ہو رہے ہیں ۔ ان سبھی علاقوں میں لوگوں میں صفائی ستھرائی کے تئیں بیداری لانے کاکام بھی جاری ہے
مسٹر آصف نے بتایا کہ مختلف ریاستوں میں 3000 واٹر پروجیکٹ لگائے گئے ہیں آنے والے دنوں میں 5000 ہینڈپمپ ،2000 پانی کے کوئیں ، 100 واٹر فلٹر پلانٹ اور 500 پبلک ٹوائلیٹ بنانے کے منصوبے پر کام جاری ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *