مہاراشٹر اسمبلی: 12 بی جے پی لیڈران ’بدسلوکی‘ کے الزام میں ایک سال کے لیے معطل

مہاراشٹر اسمبلی: 12 بی جے پی لیڈران ’بدسلوکی‘ کے الزام میں ایک سال کے لیے معطل

بتایا جا رہا ہے کہ مہاراشٹر اسمبلی میں پریزائڈنگ افسر بھاسکر جادھو سے بدسلوکی کرنے کے الزام میں 12 بی جے پی اراکین اسمبلی کو ایوان سے ایک سال کے لیے معطل کیا گیا ہے۔
مہاراشٹر اسمبلی سے بی جے پی کے 12 اراکین کو ایک سال کے لیے سسپنڈ کر دیا گیا ہے۔ یہ خبر بی جے پی کے لیے ایک زوردار جھٹکا ہے کیونکہ اس سے مہاراشٹر اسمبلی میں اپوزیشن کا کردار نبھانے میں اور اپنی آواز بلند کرنے میں کمزوری پیدا ہوگی۔ بی جے پی اراکین کی معطلی کے تعلق سے ایک افسر نے بتایا کہ پریزائڈنگ افسر بھاسکر جادھو سے بدسلوکی کرنے کے الزام میں انھیں مہاراشٹر اسمبلی سے ایک سال کے لیے معطل کیا گیا ہے۔ یہاں قابل ذکر ہے کہ مہاراشٹر اسمبلی کے دو روزہ مانسون اجلاس کی پیر کے روز ہی شروعات ہوئی جو کہ انتہائی ہنگامہ خیز ثابت ہوئی۔
میڈیا ذرائع سے موصول ہو رہی خبروں کے مطابق جن 12 بی جے پی اراکین اسمبلی کو مہاراشٹر اسمبلی سے ایک سال کے لیے معطل کیا گیا ہے ان میں کئی اہم نام شامل ہیں۔ بتایا جا رہا ہے کہ سنجے کُٹے، آشیش شیلار، ابھمنیو پوار، گریش مہاجن، اتل بھٹکھلکر، پراگ الونی، ہریش پمپلے، رام ستپوتے، جے کمار راول، یوگیش ساگر، نارائن کوچے اور کیرتی کمار جیسے لیڈروں کو ایک سال کی معطلی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *